مجھے عورتوں کو کم تر سمجھنے والے مرد پسند نہیں، ورسٹائل اداکارہ ثناء جاوید


Mian Fayyaz Ahmed Posted on September 20, 2020

لاہور:معروف اداکارہ ثناء جاوید نے کہا ہے کہ عدم تحفظ کا شکار اور دوسروں پر شک کرنے والے مرد مجھے اچھے نہیں لگتے۔ جو عورتوں کو خود سے کم تر سمجھتے ہیں اور ہمیشہ ان پر غلبہ حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔فنکارانہ صلاحیتیں ہر انسان کے اندر ہوتی ہیں لیکن ان کو بہتر انداز میں اجاگر کرکے اپنے اندر کے فنکار کو مطمئن کرنا ہر ایک ذی روح کے بس میں نہیں ہوتا۔اکثر شوق کی خاطر اس فیلڈ میں آجاتے ہیں لیکن اپنے آپ کو منوانے میں ناکام رہتے ہیں ، کچھ حادثاتی طور پر آتے ہیں اور چھا جاتے ہیں، ان کو پتا بھی نہیں چلتا۔ ان کے اندر کے فنکار کو ایک جوہری نے کتنی خوبصورتی کے ساتھ تراشا ہے۔

25 مارچ 1993ء کو کراچی میں جنم لینے والی ثناء جاوید بھی ایسے ہی فنکاروں میں شامل ہے۔ ان کو فن ورثے میں نہیں ملا۔ انہوں نے اپنے اندر کی فنکارہ کو عمدہ کردار نگاری سے شناحت دی۔ 2012ء میں اشتہاری فلم سے کیریئر کا آغاز کرنے والی اس اداکارہ نے معاون اداکارہ کے کردار میں ڈرامہ سیریل ’’میرا پہلا پیار ‘‘سے کیا۔ بعد ازاں مختصر کردار میں ڈرامہ سیریل ’’ شہر ذات ‘‘ اس برس کیا۔ 2013ء میں سیریل ’’ پیارے افضل ‘‘ کی مقبولیت نے ساتھی فنکارہ کے طور پر ان کی شناحت میں اضافہ کیا۔ ان کے قابل ذکر ٹی وی ڈراموں میں ’’ رنجش ہی سہی، مینو کا سسرال، میری دلاری، حصار عشق، بے حد (ٹیلی فلم)، دینو کی دلہنیا (ٹیلی فلم)، گویا، چنگاری، دل کا کیا رنگ کروں، شریک حیات، کوئی دیپک ہو، پیوند، مانا کا گھرانہ، اعتراض، ذرا یاد کر، انتظار، خانی، رومیو ویڈزہیر، ڈر خدا سے اور رسوائی بھی شامل ہیں۔

چھوٹی سکرین پر رنگ جمانے کے بعد 2017ء میں ’’ مہرالنساء وی لب یو‘‘ کے ذریعے سنیما کی بڑے پردے پر نظر آئی۔ گوکہ یہ فلم کہانی میں نقائص کے باعث کوئی چمتکار نہیں دکھا سکی۔ اداکاروں کو بھی ان کی صلاحیتوں کے مطابق استعمال نہیں کیا جاسکا۔